JKNSF نے طلبہ یونینز کی بحالی کے لیے آل پارٹیز کانفرنس اور مظفرآباد کی طرف لانگ مارچ کا اعلان کردیا۔

مظفرآباد (نیل فیری نیوز) جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن نے آزاد کشمیر میں طلبہ مسائل کے پیشِ نظر طلبہ یونین کی بحالی کے لیے رواں ماہ کے آخری عشرے میں طلبہ تنظیموں کی مرکزی سطح پر آل پارٹیز کانفرنس کا اعلان کر دیا۔

پریس کانفرنس سے مرکزی صدر جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن ناصر لیاقت، مرکزی سینئر نائب صدر اظہر رشید، مرکزی نائب صدر احسن خواجہ، مرکزی سیکرٹری جنرل ظہیر میر، ڈپٹی جنرل سیکرٹری فیصی آفتاب، ممبر سنٹرل کمیٹی اکمل جرال، ڈسٹرکٹ چیئرمین عاقب عظیم، چئیرمین جامعہ کشمیر شاہد نزیر، عمیر چوہدری، جنید میر، رشید میر، اسامہ خواجہ، جمشید، عاطف، سہیل مغل اور دیگر نے اظہارِ خیال کرتے ہوئے کہا کہ آزاد کشمیر میں طلبہ برادری بےشمار مسائل کا شکار ہے۔ طلباء یونین پر پابندی نے تعلیمی اداروں کو مسائل کی آماجگاہ بنا رکھا ہے۔ گزشتہ دورِ حکومت میں یونین کی بحالی کا نوٹیفیکیشن ہوا مگر تاحال یونین کے الیکشن نہ ہو سکے جوکہ طلبہ برادری کے سیاسی و جمہوری اور قانونی حقوق پر قدغن ہے۔ تعلیمی اداروں میں فیسوں میں بےجا اضافہ، آزادیِ اظہارِ راۓ پر پابندی طلبہ کو سیاسی اور فکری طور پر مفلوج بنانے کی سازش ہے۔ؔ

تنظیم طلبہ یونین کے حوالے سے قبل ازیں تحریک کا اعلان کر چکی ہے جس کے ابتدائی مرحلے میں مارچ کے آخری عشرے میں مرکزی سطح پر آل پارٹیز کانفرنس (APC) کا انعقاد کرے گی جس کے بعد ریاست کے تمام اضلاع میں احتجاجی ریلیوں اور سیمینار کا انعقاد کیا جاۓ گا۔ تنظیم تیسرے مرحلے میں آزاد کشمیر کی تمام طلبہ برادری کو ساتھ ملاتے ہوئے مظفرآباد کی طرف لانگ مارچ کرئے گی۔ JKNSF یہ مطالبہ کرتی ہے کہ فل فور آزاد کشمیر میں طلباء یونین کے الیکشن کرواۓ جائیں۔

صحافیوں سے گفتگو میں مرکزی صدر اور دیگر رہنماؤں نے کہا کے گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے کی پالیسی دراصل ہندوستان اور پاکستان کے گٹھ جوڑ کا ثبوت ہے۔ تاریخی طور پر ریاست جموں کشمیر ناقابلِ تقسیم وحدت ہے۔ بین الاقوامی قوانین اور اقوامِ متحدہ کے اندر بھی ریاست جموں کشمیر کا سوال متنازعہ حثیت رکھتا ہے۔ ایسے میں ریاست جموں کشمیر کی مستقل تقسیم کے لیے کی جانے والی ہر سازش نہ صرف ریاست جموں کشمیر کی عوام کی مرضی کے برخلاف ہے۔ بلکہ بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے۔ 5 اگست 2019 کے ہندوستان کے جابرانہ اقدام کے بعد پاکستان کی طرف سے گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے کی سازش ہو رہی ہے۔ جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن نہ صرف ایسے اقدام کی مزمت کرتی ہے بلکہ ہر ممکن سیاسی مزاحمت کا راستہ بھی اختیار کرۓ گی۔

جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن یہ مطالبہ کرتی ہے کہ گلگت بلتستان کی عوام کو حقِ حکمرانی اور وہاں کے وسائل کا کنٹرول بھی گلگت بلتستان کی عوام کے حوالے کیا جاۓ۔ JKNSF یہ سمجھتی ہے کہ صوبے کے نام پر گلگت بلتستان کی شناخت مٹانے کی سازش ہے اس ضمن میں گلگت بلتستان کی قیادت سے روابطہ کا سلسلہ شروع کیا جاۓ گا تاکہ دونوں اکائیوں میں قبضہ گیری کے خلاف مشترکہ آواز بلند کی جاسکے۔