78 سالہ بابے کی 18 سالہ لڑکی سے شادی

سوشل میڈیا پر آپ نے محبت کی شادی سے متعلق کئی خبریں پڑھی ہوں گی، لیکن ابھی جو خبر ہم آپ کو بتانے جارہے ہیں، اس کو پڑھ کر آپ بھی چونک جائیں گے اور اس سوچ میں پڑسکتے ہیں کہ کیا واقعی محبت اندھی ہوتی ہے ۔

سوشل میڈیا پر آپ نے محبت کی شادی سے متعلق کئی خبریں پڑھی ہوں گی، لیکن ابھی جو خبر ہم آپ کو بتانے جارہے ہیں، اس کو پڑھ کر آپ بھی چونک جائیں گے اور اس سوچ میں پڑسکتے ہیں کہ کیا واقعی محبت اندھی ہوتی ہے ۔ دراصل فلیپینز میں ایک 78 سال کے سن رسیدہ شخص نے اپنے سے تقریبا 60 سال چھوٹی لڑکی سے شادی کی ہے ۔ لڑکی کی عمر صرف 18 سال بتائی جارہی ہے ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق شادی سے پہلے سن رسیدہ شخص اور لڑکی تقریبا تین سالوں تک لیو ان ریلیشن شپ میں بھی رہے ۔ اس کے بعد اپنے کنبہ کے اراکین کی رضامندی کے بعد ایک دوسرے سے شادی کرلی ۔

78 سال کے سن رسیدہ شخص کا نام رشید منگاکاپ ہے، جو پیشہ سے کسان ہیں ۔ مرر کی ایک رپورٹ کے مطابق تقریبا تین سال پہلے کاگاین صوبہ میں ایک ڈنر پارٹی کے دوران رشید کی ملاقات 15 سالہ حلیمہ عبداللہ سے ہوئی تھی ۔ پہلی ہی ملاقات میں دونوں کو ایک دوسرے سے پیار ہوگیا تھا ۔ اس کے بعد دونوں نے لیوان میں رہنے کا فیصلہ کیا ۔

یہ بھی پڑھئے: شوہر 56 سال کا، بچے 22، اب 25 سال کی بیوی نے کہا : 80 اور پیدا کرنے کی خواہش

تقریبا تین سال تک لیو ان ریلیشن شپ میں رہنے کے بعد دونوں نے اپنے اپنے کنبہ کے سامنے شادی کی خواہش کا اظہار کیا، جس کے بعد دونوں کے اہل خانہ نے شادی کیلئے ہاں کردی ۔ پھر دونوں نے کنبہ کی موجودگی میں شادی کرلی ۔ 78 سالہ دولہا بنے رشید کے بھتیجے نے بتایا کہ دونوں کی شادی آرینج نہیں بلکہ لو میریج تھی ۔ دونوں ایک دوسرے سے کافی طویل عرصہ سے پیار کرتے تھے ۔ رشید نے بتایا کہ اس کے چچا کی پہلی شادی نہیں ہوئی تھی اور وہ اب تک کنوارے تھے ۔

رشید کے بھیتجے نے بتایا کہ دولہن کے والد میرے چچا کیلئے کام کرتے ہیں ۔ اس کی وجہ سے ایک ڈنر پارٹی میں میرے چچا کی ملاقات حلیمہ سے ہوئی تھی ۔ بھتیجے نے بتایا کہ تقریبا تین سال کے انتظار کے بعد دونوں کے رشتے کو اہل خانہ کی رضامندی ملی ۔