مظفرآباد،پی این اے کے مارچ پر پولیس کا دھاوا 1جاں بحق 24 زخمی چھڑپیں جاری

مظفرآباد( نیل فیری نیوز) ترقی پسند اور قوم پرست تنظیموں پر مشتمل پیپلز نیشنل الائنس کے زیر اہتمام جموں کشمیر چھوڑ دو تحریک کے پر امن مارچ پر پولیس کے لاٹھی چارج کے نتیجے میں ایک نوجوان جاں بحق جبکہ2 درجن سے زائد کارکن زخمی ہوگئے ہیں جبکہ کئی گاڑیاں اور موٹر سائیکلوں کو نقصان پہنچا ہے ۔ قوم پرست تنظیموں پر مشتمل پی این اے اتحادنے بھارتی زیر انتظام کشمیر میں کرفیو، پابندیوں، فوجی جبر اور آئینی اور سیاسی حقوق چھینے جانے کے عمل کی مذمت کرتے ہوئے مزاحمت کرنے والے کشمیری عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی ۔ غیر ملکی افواج کے جموں کشمیر کے تمام علاقوں سے انخلا، سیاسی اسیران کی رہائی، آئین ساز اسمبلیوں کے قیام سمیت کشمیر کی مکمل آزادی وخودمختاری کے حق میں اپر اڈہ سے قانون ساز اسمبلی سیکریٹریٹ تک مارچ کا اہتمام کیا تھا ، قبل ازین ریاست بھر سے لگ بھگ 4 ہزار کارکن مظفرآباد یونیورسٹی گرائونڈ میں جمع ہوئے تھے جہاں رات کو آزادی کے لائیو ترانوں پر اپنے لہو کو گرماتے رہے ۔پولیس نے آج منگل کو شہر کے متعدد مقامات پر رکاوٹیں کھڑی کررکھی تھیں ۔پی این اے کا جلوس جیسے ہی یونیورسٹی گرائونڈ کے سے باہر پہنچا تو پولیس نے ریلی کے شرکا پر لاٹھی چارج شروع کردی ۔آنسو گیس کا استعمال کیا گیا جس کی وجہ سے قاضی اسلم سکنہ پٹہکہ مظفرآباد جاں بحق2 درجن کارکنان زخمی ہوگئے۔ پولیس نے بے رحمی سے مظاہرین پر لاٹھی چارج کیا جس کی وجہ سے ان کے چہرے، بدن اور مختلف حصوں سے خون بہہ رہاتھا جبکہ کئی منٹ سڑک پرپڑے رہنے کے باوجود کوئی اٹھا نے والا نہیں تھا تاہم پولس نے خواتین کے ساتھ رحمی کا مظاہرہ کیا اور ان پر کسی قسم کا کوئی تشدد نہیں کیا ۔ مظاہرین نے بھی پولیس پر پتھرائو کیا جس کے نتیجے میں پولیس اہلکاروں کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں،آخری اطلاعات تک مظاہرین اور پولیس میں چھڑپیں جاری تھیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں