چک سواری میں بکری چوروں کی گرفتاری کامعاملہ، متضادخبریں۔ عوام علاقہ نے حقائق سامنے لائے جانے کامطالبہ کردیا۔

چک سواری (نمائندہ نیل فیری) پولیس تھانہ چک سواری نے ڈھوک پیردُلڑکے مقام سے غیرریاستی بکری چوروں کاگروہ گرفتارکرلیاگیاہے اورچوروں کے قبضہ سے مال مسروقہ(دوعددبکرے)بھی برآمدکرلیے گئے ہیں۔عوام علاقہ نے ملزمان کوبکریاں پکڑتے ہوئے دیکھااورپھرگرفتارکرکے پولیس کے حوالے کیا۔ملزمان میں سلیمان،محب اللہ پسران محمدصدیق،برکت علی ولدشیردین شامل ہیں جن کاتعلق پاکستان کے صوبہ خیبرپختون خواہ کے ضلع دیرسے ہے۔حدودتھانہ چک سواری میں جرائم پیشہ افرادکی موجودگی اورجرائم کی شرح بالخصوص چوری کی وارداتوں میں اضافے نے عوام علاقہ کوسخت پریشان کررکھاہے ایسے میں چوروں کی گرفتاری سے عوام نے سکھ کاسانس لیتے ہوئے پولیس سے مطالبہ کیاہے کہ وہ قانون شکن عناصرسے آہنی ہاتھوں سے نمٹے تاکہ علاقے میں امن وامان کی فضاء برقراررہے۔دوسری طرف متضادخبریں ایسی بھی آرہی ہیں کہ مذکورہ بالاافرادکافی عرصہ سے پلاک چک سواری میں رہائش پذیرہیں اورمحنت مزدوری کرکے رزقِ حلال کماتے ہیں۔قبل ازیں ان کی ایسی کوئی سرگرمی یاحرکت نہ دیکھی گئی ہے۔صرف شک کی بنیادپرانہیں گرفتارکیاگیاہے اورپولیس اپنی کارکردگی بنانے کے لیے اصل مرتکبان کوگرفتارکرنے کی بجائے غریب وپردیسی مزدوروں کوچوری کے جھوٹے مقدمے میں ملوث کررہی ہے۔عوام علاقہ اورمعترذرائع کے مطابق جائے وقوع سے تین افرادکوپولیس کی حراست میں دیاگیالیکن تھانہ پولیس چک سواری کے اہلکاران نے صرف دوملزمان کی گرفتارکی تصدیق کی اوروقوع کی تفصیلات بتانے سے گریزکرتے ہوئے کہاکہ تفتیش کے بعدہی تمام حالات سامنے لائے جائیں گے۔چک سواری کے سماجی حلقوں نے حدودتھانہ چک سواری میں چوری کی بڑھتی ہوئی وارداتوں اورموجودہ مشکوک وقوع پراظہارتشویش کرتے ہوئے ایس ایس پی میرپورودیگراعلیٰ حکام سے مطالبہ کیاہے کہ عوام کے جان ومال کے تحفظ کویقینی بناتے ہوئے حقائق سامنے لائے جائیں۔#

اپنا تبصرہ بھیجیں