کورونا وائرس سے احتیاط: مطاف، سعی، روضہ اور جنت البقیع بند

مکہ مکرمہ (نیل فیری نیوز)
مسجد الحرام اور مسجد نبوی امور کی جنرل پریذیڈنسی کے ایک عہدیدار نے بتایا ہے کہ عشاءکی نماز ختم ہونے کے ایک گھنٹے بعد مسجد الحرام مکہ مکرمہ اور مسجد نبوی شریف مدینہ منورہ بند کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا۔ دونوں مساجد فجر کی نماز سے ایک گھنٹے قبل کھول دی جائیں گی۔
سعودی خبررساں ادارے ایس پی اے کے مطابق انتظامیہ کے عہدیدار نے بتایا کہ’ یہ فیصلہ حفاظتی صحت تدابیر، کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کو روکنے کے لیے دونوں مقدس مساجد کی مسلسل صفائی اورفرض نمازوں سے خارج اوقات میں انہیں جراثیم سے پاک صاف رکھنے کی ضرورت کے پیش نظر کیا گیاہے‘۔

انتظامیہ کے عہدیدار نے مزید بتایا کہ ’جب تک عمرہ بند رہے گا تب تک خانہ کعبہ کے اطراف طواف والا صحن اور صفا و مروہ کے درمیان سعی والا حصہ بھی بند رکھا جائے گا۔ عمرے پر پابندی کے دوران نمازیں صرف مسجدکے اندر ہوں گی‘۔
انتظامیہ کے عہدیدا ر نے توجہ دلائی کہ ’سعودی شہریوں اور مقیم غیر ملکیوں کے عمرے پر پابندی کا فیصلہ مکہ مکرمہ شہر کے تمام باشندوں پربھی لاگو ہوگا ۔ کسی بھی احرام پوش کو مسجد الحرام اور اس کے اطراف صحنو ں میں داخل ہونے کی اجازت کسی بھی حالت میں نہیں دی جائے گی‘۔

سعودی عرب میں کورونا کے نئے مریض، کل تعداد پانچ ہوگئی

مکہ اور مدینہ میں زائرین کی تعداد کم ہوگئی

ایک فیصلہ یہ بھی کیا گیاہے کہ اعتکاف اور مسجد میں بستر ڈالنے کی بھی اجازت نہیں ہوگی۔ کھانے پینے کی اشیا لے جانے کی بھی ممانعت ہوگی۔ آب زمزم کی سبیلیں بھی بند کردی جائیں گی۔
انتظامیہ کے عہدیدار نے یہ بھی بتایا کہ احتیاطی تدابیر کے تحت روضہ شریفہ سمیت مسجد نبوی کا پرانا والا حصہ بھی بند کردیاجائے گا جبکہ جنت البقیع بھی بند کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔
یاد رہے حرم مکی الشریف میں کورونا وائرس سے بچاو کے پیش نظر جمعرات کی سہہ پہرعصر کی نماز کے بعد سے زائرین سے خالی کرانے کا آغاز کردیاگیا تھا تاکہ صحن مطاف کو جراثیم کش ادویات سے دھو کر صاف کیاجائے۔
حرم مکی الشریف میں موجود زائرین کا کہنا تھا کہ انتظامیہ کی جانب سے حرم شریف کی چھت سے طواف کرنے کی اجازت دی تھی جبکہ زیریں حصے میں کسی کو داخل ہونے نہیں دیا جارہا تاکہ وہاں جراثیم کش ادویات کا اسپرے کیاجاسکے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں