مظفرآباد: لاک ڈائون کے حوالہ سے مستقبل کا لائحہ عمل، سائبر کرائم ایکٹ، بیرون ممالک سے آنے والوں کے قرنطینہ بارے وزیر آزاد حکومت ڈاکٹر مصطفیٰ عباسی کی پریس بریفنگ۔

مظفرآباد (نمائندہ نیل فیری) وزیرٹیوٹا و آئی آئی ڈاکٹر مصطفی بشیر عباسی نے کہا ہے کہ کورونا کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے حکومت تمام وسائل بروئے کار لاتے ہوئے اقدامات کررہی ہے۔ انٹری پوائنٹس پر سختی ہے۔ مزید لاک ڈاؤن کے حوالے سے 14 اپریل کو میٹنگ میں حالات کے مطابق فیصلہ کیا جائے گا۔ پی پی ایز کٹس کے حوالے سے ایک پالیسی ہے۔ یہ کٹس کس کو دینی ہے یہ سپیشلسٹ ڈاکٹرز کی ٹیم نے فیصلہ کرنا ہوتا ہے۔ ہم نے ان کی ڈیمانڈ کے مطابق کٹس فراہم کردی ہیں۔ڈاکٹرز کو بتا دیا ہے کہ کھل کر کورونا کیخلا ف کام کریں اگر کوئی مسئلہ ہوگا تو اسے حل کیاجائے گا۔

مظفرآبا د میں کورونا کے پہلے مریض کو کوئی علامات نہیں تھیں۔ دیگر بیماریوں کی وجہ سے ایمز ہسپتال میں داخل تھا۔ ڈاکٹرز نے احتیاط کے طور پر ٹیسٹ کیا جو مثبت آیا۔ ری چیک کرنے کیلئے دوبارہ ٹیسٹ کیا جس کی کاپی این آئی ایچ کو بھی بھیجوائی گئی۔ اس مریض سے رابطہ میں ہسپتال کے عملہ کو قرنطینہ کردیا ہے۔ 37 کے قریب ملاقاتیوں کے بھی ٹیسٹ کروائے جارہے ہیں۔

سوشل میڈیا کے ذریعے افواہیں نہ پھیلائی جائیں۔سائبر کرائم ایکٹ لاگوہے اگر کسی نے ایسی کوئی افواہ پھیلائی تو قانون حرکت میں آئے گا۔ یہ وقت لوگوں کا حوصلہ بڑھانے کا ہے۔ بھارت کی طرف سے کنٹرول لائن پر فائرنگ اورگولہ باری کی مذمت کرتے ہیں۔ بھارتی سفیر کی دفتر خارجہ طلبی کی جائے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے ڈی جی اطلاعات راجہ اظہر اقبال کے ہمراہ بروز ہفتہ مرکزی ایوان صحافت میں بریفنگ دیتے ہوئے کیا۔

ڈاکٹر مصطفی بشیر عباسی نے مزید کہاکہ آئسولیشن ہسپتال مظفرآبا میں کورونا مثبت آنیوالے مریض کو رکھا گیا ہے۔ ڈاکٹر منفی ٹیسٹ والے سیریس مریض کو بھی یہاں رکھنے کا فیصلہ کرسکتے ہیں۔ قرنطینہ سینٹر ز میں تمام سہولیات موجود ہیں۔ مریض ثناء اللہ کے گاؤں لوات کو قرنطینہ کردیا ہے۔

انہوں نے کہاکہ حکومت پاکستان نے غیر ملکی پروازیں بھی چلا دی ہیں۔ بیرون ملک سے آنیوالے افراد کو سات دن اسلام آباد میں قرنطینہ کیا جائے گا۔ منفی ٹیسٹ آنیوالے افراد پرمٹ کیساتھ آزادحکومت کے حوالے ہوں گے۔ جنہیں ہم یہاں ان کے گھروں پر مزید 8 دن قرنطینہ کریں گے۔

ان کا کہناتھا کہ یہ مشکل وقت ہے ہمیں ایک دوسرے کی مدد کرنی ہے۔ پاکستان کے مختلف شہروں میں آزادکشمیر کے جتنے بھی شہری ہیں وہ نبیؐ کی حدیث جس علاقے میں وباء آئے نہ اس میں جاؤ نہ اس سے باہر نکلوپر عمل کرتے ہوئے وہیں رہیں۔ پاکستانی بھائی ان کی مدد کریں۔ ہم یہاں پر جو بھی باہر کے لوگ ہیں ان کی مدد کررہے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ وزیراعظم راجہ فاروق حیدر خان نے سختی سے ہدایات جاری کررکھی ہیں کہ انٹری پوائنٹس سے کسی کو نہ آنے دیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ ہماری عوام باشعور ہے بہت آگاہی رکھتے ہیں۔ عوام گھروں میں رہیں۔ حکومت‘ محکمہ صحت عامہ اور اداروں کی طرف سے جاری کردہ ہدایات پر عمل کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں