وفاقی وزیر کے ڈرائیور کو لیڈر نہیں مانتے، سجاد گیلانی

اسلام آباد (نیل فیری نیوز) پی ٹی آئی یوتھ ونگ آزاد کشمیر کے سنئیر رہنما سجاد گیلانی نے پاکستان تحریک انصاف یوتھ ونگ آزادکشمیر کی مرکزی تنظیم سازی کے لیے کی جانے والی نئی نامزدگیوں پر شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے سوال اٹھا دیے. سید سجاد گیلانی نےکہا کہ تنظیم سازی میں صرف ایک یونین کونسل سے تین مرکزی عہدوں کے لیے نامزدگی ناقابل فہم ہے، جبکہ تنظیمی ڈھانچہ پورا آزادکشمیر کے لیے ہے. انہوں نے کہا کہ ایک یونین کونسل سے 3 اہم عہدے صدر ، سینئر نائب صدر ، فنانس سیکرٹری کہاں کا انصاف ہے
انہوں نے کہا کہ تنظیم سازی میں ایک شخص کو عہدہ دیا گیا ہے جبکہ وہ مادر باڈی میں ڈپٹی جنرل سیکرٹری کے عہدے پر موجود ہے اسے یوتھ کی مرکزی نائب صدر نامزدگی کیونکر ہوی کیا آزادکشمیر سے 10 10 سال سے پارٹی کے لیے محنت کرنے والے نوجوان ختم ہو گئے تھے؟؟
انہوں نے کہا کہ کچھ ایسے نئے چہرے جن کو نہ تو کوئی پارٹی میں جانتا ہے نہ ہی گراونڈ میں ان کی کوئی ورک ہے ان کو صرف پسند ناپسند کی اور پیسے کی چمک کی بنیاد پر 10 10 سال کے پرانے جانثار اور محنتی کارکنوں پر ترجیح دینا کیاقرین انصاف ہے.
انہوں نے کہا کہ کیا ایک شخص جو آٹھویں پاس ہے اس کو پارٹی کا اہم عہدہ تفویض کیا گیا ہے

انہوں نے اقرباء پروی کی بنیاد پر کی جانے والی نامزدگیوں کو مسترد کرتے ہوئے نوجوانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے حق کیلے اٹھ کھڑے ہوں کیونکہ آپ کی محنت پے پانی پھیرا جا رہا ہے اگر آج آپ اپنا حق نہیں لو گئے تو کل کوئی گھاس بھی نہیں ڈالے گا آج اگر آپ کسی سے ڈر جائیں یا باتوں میں آجائیں گے تو یہ آپ کشمیر کا نقصان کریں اور یاد رہے ہمارے یوتھ صدر کا مقابلہ ضیاء قمر اور عثمان عتیق سے یہی وجہ ہے کسی بھیڑ بکری کے پیچھے نہیں کھڑے ہو سکتے کشمیری ایک پڑھی لکھی قوم ہے اس کو یڑھی لکھی قیادت کسی فیڈرل منسٹر کے ڈرائیور کو ہم کشمیر کی پڑھی لکھی یوتھ کی قیادت نہیں دے سکتے یہ چالیس لاکھ کشمیریوں کے مستقبل کا سوال ہے انہوں نے کہا ہم عمران خان کے نظریے پر تب تک قائم ہیں جب تک انصاف ہوتا رہے گا ہمیں مجبور نہ کیا قیادت فوراً سے پہلے ان نکمے لوگوں کو ڈینوٹیفائیڈ کرے اور کشمیر کی یوتھ کے پلیٹ فارم پہلے بھی عمران خان کے ساتھ رہی ہے انہیں اعتماد میں لیا جائے،

اپنا تبصرہ بھیجیں