جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کا تنظیمِ نو کا فیصلہ

محبوس قومی رہنمایاسین ملک پارٹی چیئرمین برقرار۔
سپریم کونسل اور مرکزی ڈھانچے سمیت زونل و نچلی سطح کی تنظیم تحلیل۔ایک سال کی مدت تک خواجہ سیف الدین کی سربراہی میں 41 ممبران پر مشتمل مرکزی کمیٹی قائم۔ جاوید حنیف کمیٹی کے سیکریٹری، منظور خان فائنانس جبکہ ترجمان محمد رفیق ڈار مقرر۔ سفارتی شعبہ پروفیسر راجہ ظفر خان کی سربراہی میں عبوری طور پر کام جاری رکھے گا۔
راجہ حق نواز خان آزاد کشمیرگلگت بلتستان زون کے کنوینر نامزد۔ سٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ کا ڈھانچہ برقرار۔ڈسپلن شکنی کے مرتکب کارکنان کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لانے کے عزم کا اظہار۔ سپریم کونسل کے آخری اجلاس میں اتفاق رائے کے ساتھ فیصلے۔
شیخ عبدالحمید، چوہدری جمیل ایڈوکیٹ اور مشتاق احمد لون سمیت دیگر شہدائے عالی کدل کو خراج ِعقیدت پیش۔
گلگت بلتستان سمیت دیگر موضوعات پر ہوئے فیصلوں پر عمل درآمدکا کام مرکزی کمیٹی کے سپرد ۔۔۔ ترجمان JKLF۔

راولپنڈی(نیل فیری نیوز)جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے اعلی اور بااختیارپالیسی ساز ادارے سپریم کونسل نے تحریک ِ آزادی ئ ریاست جموں کشمیر کی موجودہ صورتحال اور در پیش چیلنجز کا مقابلہ کرنے کے لئے انقلابی و سائنٹفک بنیادوں پر نئے شرائط اور قواعد و ضوابط کے تحت لبریشن فرنٹ کی تنظیمِ نو کا فیصلہ کیا ہے۔ پارٹی ترجمان محمد رفیق ڈار کی طرف سے اخبارات کے لئے جاری بیان کے مطابق یوم ِ شہدائے عالی کدل کے موقع پر سنٹرل انفارمیشن آفس میں گذشتہ روز دن 2 بجے سپریم کونسل کا اجلاس منعقد ہوا۔علیل قائمقام چیئرمین عبدالحمید بٹ کی طبیعت زیادہ بگڑنے کے سبب سپریم کونسل کے بھر پوراجلاس کی صدارت بزرگ رہنما وائس چیئرمین حافظ محمد انور سماوی نے کی جبکہ منقسم ریاست جموں کشمیر کے دونوں اطراف اور سمندر پار زونز سے جملہ عہدیداران و ممبران ویڈیو لنک کے ذریعے اجلاس میں شریک رہے۔
ترجمان کے مطابق اجلاس کے آغاز پر شہدائے عالی کدل کے حق میں دعا کرتے ہوئے صدرِ اجلاس حافظ محمد انور سماوی نے شہید ِ حریت شیخ عبدالحمید اور ان کے ساتھیوں شہید چوہدری جمیل ایڈوکیٹ، شہید مشتاق احمد لون، شہید فیاض احمد شیخ، شہید مشتاق احمد کُٹّے، شہید مشتاق احمد خان اور شہید غلام محمد خان کو ذبردست خراج ِ عقیدت پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ آج ہی کے دن شہید شیخ عبدالحمید کی قیادت میں شہدائے عالی کدل نے تحریک ِآزادی کی اپنے خون سے آبیاری کرتے ہوئے کشمیر کی تاریخ کا ایک نیا اور ناقابل فراموش باب رقم کیا۔ انہوں نے کہا کہ شہدائے عالی کدل کے خون سے دریائے جہلم کی سرخی وطن عزیز کی مکمل آزادی کے حصول کے ساتھ ہی ختم ہو سکتی ہے۔ سماوی صاحب نے واضح کیا کہ تحریک ِ آزادی کے لئے اپنے بچپن اور جوانی کو قربان کرنے والے شیخ عبدالحمید اور اُن کے ساتھیوں کی قربانیوں کے ساتھ کسی کو کھلوارڑ کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ اجلاس میں بابائے قوم شہید محمد مقبول بٹ کے برادر اصغر مرحوم غلام نبی بٹ کی برسی کے موقع پر اُن کے ایصال ثواب اور محبوس چیئرمین محمد یاسین ملک سمیت جملہ اسیران کی جلد رہائی و علیل قائمقام چیئرمین عبدالحمید بٹ کی جلد صحت یابی کے لئے دعا کی گئی۔
تفصیلات کے مطابق سپریم کونسل نے موجودہ صورتحال سے بہتر حکمت ِ عملی کے ساتھ نبرد آزما ء ہونے اور لبریشن فرنٹ کی تنظیم ِ نو کے ارادے کے ساتھ اتفاق رائے سے قائد ِ انقلاب اور قوم کے ہر دلعیز رہنما بھارت کی تہاڑ جیل میں غیر قانونی طور پر قید جناب محمد یاسین ملک کو پارٹی کا چیئرمین برقرار رکھتے ہوئے سپریم کونسل اور پارٹی کے مرکزی ڈھانچے سمیت زونل و نچلی سطح کی تنظیم کو تحلیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ سپریم کونسل میں مشترکہ اور اتفاق ِ رائے کے ساتھ ہونے والے فیصلوں کے مطابق جموں کشمیر اسٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ کا ڈھانچہ بدستور قائم رہے گا جبکہ سفارتی شعبہ بھی پروفیسر راجہ طفر خان کی سربراہی میں عبوری طور پر اپنا کام جاری رکھے گا۔
ترجمان کے مطابق سپریم کونسل نے باتفاق ِ رائے پارٹی کے سینئر رہنما خواجہ سیف الدین کی سربراہی میں 41 ممبران پر مشتمل ایک مرکزی کمیٹی تشکیل دی،جس کے سیکریٹری سردار جاوید حنیف اور فائنانس سیکریٹری منظور احمد خان جبکہ ترجمان محمد رفیق ڈار مقرر ہوئے ہیں۔بھارتی مقبوضہ جموں کشمیر کے علاوہ آزاد کشمیر گلگت بلتستان زون سے عبدالحمید بٹ، حافظ محمد انور سماوی، سلیم ہارون، راجہ حق نواز خان، ساجد صدیقی، خواجہ منظور احمد چشتی، ڈاکٹر توقیر گیلانی، ضیاء الحق اور عبدالرحیم ملک، برطانیہ سے پروفیسر راجہ ظفر خان، صابر گُل، لیاقت لون اور مشتاق ملک کے علاوہ مزید ایک ممبر، یورپ زون سے سردار زاہد حسین، تنویر احمد چوہدری، شبیر جرال، ملک لطیف اور کاظم شاہ، مڈل ایسٹ زون سے خالد کشمیری، نوید اجمل، رفاقت بیگ، راجہ اجمل اور ملک معروف جبکہ امریکہ سے قاسم کھوکھر مرکزی کمیٹی کے ممبران ہوں گے۔فیصلوں کے مطابق مرکزی کمیٹی کے ممبران ایک ہفتے کے اندر اپنے مقامی زونز میں کنویننگ کمیٹیاں تشکیل دینے کے پابند ہوں گے جو نئی جہت اور قواعد و ضوابط کے تحت اپنے اپنے زونز میں نچلی سطح سے تنظیم سازی کا عمل مکمل کریں گے۔
رفیق ڈارکے مطابق سپریم کونسل نے اتفاق رائے کے ساتھ پارٹی کے سینئر اورمتحرک رہنما راجہ حق نواز خان کو آزاد کشمیر و گلگت بلتستان زون کا کنوینر نامزد کرتے ہوئے انہیں ایک ہفتے کے اندر کنویننگ کمیٹی کے باقی ماندہ ممبران کا اعلان کرتے ہی تنظیم سازی کا عمل شروع کرنے کی ہدایت کی۔
ترجمان کے مطابق اجلاس میں بھارتی مقبوضہ جموں کشمیر میں بھارتی ریاستی دہشت گردی کی پُر زور مذمت کرتے ہوئے اس عزم کا اظہار کیا گیا کہ نریندر مودی کی سربراہی میں فاشسٹ بھارتی حکومت کا مقروہ چہرہ اقوام عالم میں بے نقاب کرنے کے لئے سیاسی و سفارتی سطح پر ہر ممکن اقدامات اٹھائے جائیں گے۔شرکائے اجلاس نے یک زبان ہوکر ریاست جموں کشمیر کی قومی آزادی و خودمختاری کے حصول کے لئے ہر سطح کی قربانی دینے کے عہد کا اعادہ کیا۔ اجلاس میں اجلاس میں سپریم کونسل نے ایک بار پھر اس عزم کا اظہار کیاکہ گلگت بلتستان ریاست جموں کشمیر کا جزولاینفک ہے اور یہ کہ اسے صوبہ بنانے کی سازش کو ناکام بنانے کے لئے ہر ممکن، جائز، جمہوری، انقلابی اور پُرامن ذرایع کا استعمال کرنے سے دریغ نہیں کیا جائے گا۔ اجلاس میں طے پایا کی قائد ِ تحریک امان اللہ خان مرحوم کی تعزیتی ریفرنس سے منسوب گلگت میں ایک کانفرنس کے انعقاد کے علاوہ عوامی رابطے مزید مستحکم بنانے اور پاکستان کی سیاسی قیادت سے ملاقاتوں کا سلسلہ شروع کیا جائے گا۔اجلاس میں اتفاق ِ رائے سے سپریم کونسل میں ہونے والے جملہ فیصلوں پر عمل درآمد کا کام مرکزی کمیٹی کے سپرد کیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں