آزاد کشمیر میں موٹر وے تعمیر ،سیاحتی مقامات پر عالمی معیار کا انفرا سٹرکچر قائم کر یں گے، تنویر الیاس

اسلام آباد( سٹاف رپورٹر )وزیر اعلی پنجاب کے معاون خصوصی اور پاکستان تحریک انصاف آزاد کشمیر کے مرکزی رہنما سردار تنویر الیاس خان نے کہا ہے کہ آزادکشمیر میں سیاحت کے شعبے میں نجی شعبے کی حوصلہ افزائی و سرمایہ کاری کے لئے مفصل لائحہ عمل تشکیل دینے کی ضرورت ہے ۔ آزادخطہ میں موٹر وے اور سیاحتی مقامات پر عالمی معیار کا انفرا سٹرکچر قائم کر یں گے۔آزادکشمیر میں ہم سیاحوں کو مکمل سہولیات کے ساتھ ہفتوں اور مہینوں کا ٹور پیکیج دئیے بغیر سیاحت سے بہترین ریونیو حاصل نہیں کر سکتے ہیں

۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے یہاں اسلام آباد میں پی ٹی آئی آزاد کشمیر کے رابطہ سیکرٹریٹ میں حلقہ پانچ پونچھ،وسطی باغ اور نیلم سے آئے ہوئے مختلف عوامی وفود سے ملاقات کے دوران کیا۔ سردار تنویر الیاس خان نے کہا کہ ریاستوں کاجغرا فیہ سکڑنے اور پھیلنے کے بین الاقوامی سطح پر دور رس اثرات مرتب ہوتے ہیں۔آٹھ لاکھ مربع میل کی ریاست پاکستان اور اور تیرہ ہزار مربع میل کے آزاد کشمیر میں قومی واحدت کے خلاف اٹھنے والی آوازیں نقصان دہ ہوتی ہیں۔

امریکہ ،برازیل،چین اور روس ایسے ممالک جو دنیا کے نقشے پر چھائے ہوئے ہیں کو دیکھ کر اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ ہم رقبے کے اعتبار سے کہاں کھڑے ہیں لیکن اس کے باوجود بھانت بھانت کی بو لیاں بولی جا رہی ہیں۔تعمیر وترقی ہمارا بنیادی مسئلہ ہے جس کے لیے ہمیں شورش نہیں بلکہ شعور کی ضرورت ہے۔۔ انہوں نے کہا کہ آزاد کشمیر کا خوبصورت لینڈ سکیپ دنیا کے کسی ملک سے کم نہیں ہے لیکن اسے بین الاقوامی طرز کی سہولیات سے آراستہ کیے بغیر معاشی استحکام کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہو سکتا۔انہوں نے کہا کہ ہماری بد قسمتی یہ رہی ہے کہ آزاد کشمیر میں گذشتہ چوہتر برس میں بر سر اقتدار آنے والے لوگوں کی اکثریت جھنڈی،گاڑی،کوٹھی،پیٹرول اور ٹی اے سے آگے کانہیں سوچ سکی جس کے نتیجے میں آج تک کوئی ایسا میگا پراجیکٹ نہیں لگ سکا کہ جس میں وسائل کو مقامی سطح پر انڈسٹری میں ڈھال کر روزگار کے مواقع فراہم کیے جاتے۔سردار تنویر الیاس خان نے مزید کہا کہ ترقی کے بنیادی اصولوں میں سے ایک اصول یہ ہے کہ یا تو مقامی سطح پر آپ کے پاس اس قدر وسائل ہوں کہ ان کو بروئے کار لا کر لوگوں کی فلاح و بہبود کے لیے کام کیا جائے یا پھر باہر کے با وسائل لوگوں کے لیے مقامی سطح پر اس قدر موافق ماحول مہیا کیا جائے تا کہ وہ یہاں آکر سر مایہ کاری کر کے روزگار کے مو اقع مہیا کریں، لیکن سات دہائیوں میں ایسا ہر گز نہیں ہواجس کا خمیازہ آج ہماری چوتھی نسل بھگت رہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آزاد کشمیر ایسی جنت نما ریاست کو دنیا پر انسانی آسودگی کی حقیقی جنت بنانے کے لیے غیر معمولی اقدامات اٹھانے ہوں گے۔سردار تنویر الیاس خان نے مزید کہا کہ میں نے بحثیت سیاح دنیا دیکھی ہے آزاد کشمیر میں موٹر وے اور سیاحتی مقامات پر عالمی معیار کا انفرا سٹرکچر قائم کرنا نا گزیر ہے۔گنگا چوٹی باغ،لسڈنہ،تولی پیر،پیر چناسی اور نیلم سمیت تمام سیاحتی مقامات پر سہولیات کا فقدان ہے۔جب تک ہم سیاحوں کو مکمل سہولیات کے ساتھ ہفتوں اور مہینوں کا ٹور پیکیج نہیں دیں گے تب تک سیاحت سے ریونیو نہیں حاصل ہو گا۔سیاحت سمیت دیگر صنعتوں کو کار آمد بنانا ہو گا۔