تقریری مقابلہ بعنوان آزادی کشمیر وقت کا تقاضا، ضلع کوٹلی کے مقرر نے اول انعام حاصل کیا۔

چک سواری (تحصیل رپورٹر) انجمن احیائے سنت کے زیراہتمام مقابلہ سخن آرائی بعنوان ”آزادی کشمیروقت کاتقاضا“ کاانعقاد،ڈویژن میرپورکے مختلف مدارس کے طلباء کی شرکت،جامعہ نوشاہیہ قادریہ سہرمنڈی(کوٹلی) کے طالب علم علی زیب نے بہترین کارکردگی دکھاکرپہلاانعام حاصل کیا۔

تفصیلات کے مطابق انجمن احیائے سنت دارالعلوم اسلامیہ رضویہ چک سواری کے زیراہتمام ڈویژن میرپورکے مدارس کے طلباء کے مابین مقابلہ سخن آرائی بعنوان ”آزادی کشمیر وقت کاتقاضا“ کاانعقادگذشتہ روزدارالعلوم کے وسیع ہال میں ہوا۔مقابلہ سخن آرائی میں جامعہ نوشاہیہ قادریہ سہرمنڈی(ضلع کوٹلی) کے طالب علم علی زیب نے بہترین کارکردگی دکھاتے ہوئے اول انعام حاصل کیا جب کہ دارالعلوم محمدیہ حیدریہ بڑوٹیاں چک سواری(ضلع میرپور)کے متعلم عبدالغفارنے دوسری اوردارالعلوم اسلامیہ رضویہ چک سواری(ضلع میرپور)کے متعلم عقیل مقبول نے تیسری پوزیشن حاصل کی۔

مقابلہ سخن آرائی میں گورنمنٹ بوائزڈگری کالج چک سواری کے لیکچرارحافظ عرفان احمد اورگورنمنٹ بوائزانٹرکالج کٹھاڑ(ڈڈیال)کے لیکچرارعنایت اللہ شمیدنے ججزکے فرائض مشترکہ طورپراداکیے جب کہ مقابلہ سخن آرائی کے مہمانِ خصوصی ممتازقانون دان محمداجمل سلطانی ایڈووکیٹ عدالت العالیہ آزادجموں کشمیر و قانونی مشیرکشمیرآرفنزریلیف ٹرسٹ اخترآباداورصدرِ محفل پیکراخلاص حاجی چودھری محمدرفیق سرپرستِ اعلیٰ دارالعلوم اسلامیہ رضویہ چک سواری تھے۔دارالعلوم اسلامیہ رضویہ چک سواری کے پرنسپل پروفیسرعلامہ جمیل احمد زاہدی، پروفیسرعلامہ محمداحسن ایازانچارج بزمِ حبیبِ کبریاسمیت دارالعلوم کے مدرسین اورمعززین علاقہ نے شرکت کی۔

مہمانِ خصوصی محمد اجمل سلطانی ایڈووکیٹ نے اپنے خطاب میں حمد و ثناء کے بعد قرآن و حدیث سے علماء کی فضیلت بیان کر کے کچھ وعظ و نصیحت کرتے فرمایا کہ، علماء کرام کو لاء کی طرف آنا چاہیے۔ عوام کو کسی بھی چیز کی طرف مرغوب کرنے کے صرف دو شعبے ہیں اور وہ منبر اور مکتب ہے جو کہ دونوں ہی علماء کرام کے پاس ہیں، علماء کرام ان دونوں کے ذریعے عوام کو اسلام کی طرف راغب کریں۔انہوں نے مزید کہا کہ میں بطور قانون دان یہ کہتا ہوں کہ عدالتوں میں سب سے زیادہ جھوٹ کا سہارا لیا جاتا ہے تو وہ ہے جھوٹ اور ججز حضرات اور وکلاء ہی علماء کرام کی خدمت میں حاضر ہوتے ہیں لہذا اس جھوٹ کو علماء کرام ہی کنٹرول کر سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ علماء کے شعبے سے منسلک ہی ایک مردِ مجاہد، مردِ مومن نے عالمِ کفر للکار کر اسکو ہلا کر رکھ دیا، لہذا آپ بھی اس مردِ مجاہد کو دیکھ کر اٹھیں، حق کی آواز بنیں۔محمداجمل سلطانی ایڈووکیٹ نے سردار عبد القیوم خان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اپنی تقریر کو سمیٹا کہ جنہوں نے ایک عدالت میں جج کے ساتھ عالم دین کے بیٹھنے کا بل منظور کروایا تھا۔

اس موقع پرحاجی تاسب حسین چودھری ریٹائرڈصدرمعلم وصدرمرکزی میلاد کمیٹی چک سواری،حافظ محمدعرفان لیکچرارگورنمنٹ بوائزڈگری کالج چک سواری اورپروفیسرعلامہ جمیل احمدزاہدی پرنسپل ادارہ نے بھی خطاب کیا۔

بعد ازاں نمایاں کارکردگی کامظاہرہ کرنے والے طلباء کی حوصلہ افزائی کے لیے انہیں انعامات بھی دیے گئے جب کہ سرپرستِ اعلیٰ دارالعلوم اسلامیہ رضویہ چک سواری حاجی چودھری محمدرفیق نے اپنے دستِ مبارک سے مہمانِ خصوصی اجمل سلطانی ایڈووکیٹ کو بھی اعزازی شیلڈ پیش کی۔#