لوڈشیڈنگ کے خلاف عوام کا احتجاج جائز ہے:عبدالخالق وصی

راولاکوٹ۔(نیل فیری نیوز) پاکستان مسلم لیگ(ن) آزاد جموں و کشمیر مرکزی آرگنائزنگ کمیٹی کے ممبر سردار عبدالخالق وصی نے کہا ہے کہ ٹائیں اور ملحقہ علاقوں میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ اور کم وولٹیج کے مسئلہ کو فوری حل کیا جائے۔گزشتہ دو دنوں سے عوام سراپا احتجاج ہیں لیکن ابھی تک حکومت کا کوئی نمائندہ اس مسئلے کے حل کے سلسلے میں ان کے پاس نہیں آیا۔یہ ستم ظریفی اور انتہائی افسوس کا مقام ہے کہ وزیراعظم آزاد کشمیر کے گھر سے چند کلومیٹر کے فاصلے پر سخت گرم اور حبس زدہ موسم میں سینکڑوں افراد جن میں بزرگ افراد کی بھی ایک قابل ذکر تعداد موجود ہے پرامن طور پر بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ اور کم وولٹیج کے مسئلے کے حل کے لئے مطالبہ کر رہے ہیں لیکن حکومت کے کانوں پر جوں نہیں رینگی

۔سردار عبدالخالق وصی نے کہا کہ علاقے کے لوگ کوئی ناممکن اور لمبا چوڑا مطالبہ نہیں کر رہے بلکہ ایک قابل حل مسئلے اور اپنی ایک بنیادی ضرورت کی فراہمی کا جائز مطالبہ کر رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے احتجاجی مظاہرین سے گفتگو کے دوران کیا

۔ انہوں نے کہا کہ عوام ہر ماہ ایک خطیر رقم بلات کی صورت میں خزانہ میں جمع کراتے ہیں اور اس کے عوض ایک بنیادی سہولت چاہتے ہیں جو بحیثیت ایک ریاستی شہری سراسر ان کا بنیادی حق اور اور ہر اعتبار سے ایک جائز مطالبہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا رویہ اس سلسلے میں انتہائی مایوس کن اور عدم توجہی پر مبنی ہے۔ مسئلے کے حل کی یقین دہانی تو کجا حکومت آزاد کشمیر کا کوئی بااختیار نمائندہ پرامن مظاہرین سے ان کے اپنے اپنے زبانی مسائل سننے تک کے لئے بھی تیار نظر نہیں آتا۔

سردار عبدالخالق وصی نے کہا کہ حکومتیں اپنے وسائل اور بہتر منصوبہ بندی سے عوام کو کم ازکم بنیادی سہولیات فراہم کرنے کے لئے اپنی بساط کے مطابق کوششیں کرتی ہیں لیکن مقام افسوس ہے کہ حکومت آزاد کشمیر اپنی سی کوشش کرتے بھی نظر نہیں آرہی۔سردار عبدالخالق وصی نے کہاہم عوام کو درپیش مسائل کیلئے حکومت سے تعاون کیلئے بھی تیار ہیں اور اس سلسلہ میں مرکزی حکومت یا کسی وفاقی وزیر سے کوئی رابطہ کرنا چا ہے تو میں پل کا کردار ادا کرنے کیلئے ہمہ وقت تیار ہوں۔