لوڈشیڈنگ :ریاست گیر احتجاج ، اہم شاہراہیں بند، نیپ این ایس ایف کے مرکزی صدور سمیت درجنوں گرفتار

مظفرآباد، راولاکوٹ( نمائندگان نیل فیری) بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ آٹھ سے سولہ گھنٹے طویل ہونے کی وجہ سے مظفرآباد ، پونچھ اور میرپور ڈویژنز کے چھوٹے بڑے شہروں اور دیہی علاقوں میں احتجاجی مظاہرے جاری ، منگل کے روز عوام نے پونچھ، باغ ، میرپور اور کوٹلی کے مختلف علاقوں میں اہم شاہراہیں بند کیے رکھیں ، ٹائیں ڈھلکوٹ چوتھے دن بھی بند رہی ۔شاہراہ غازی ملت کھڈ کے مقام سے بند کر دی گئی ۔جبکہ راولاکوٹ ارجہ روڈ مظاہرین نے مجاہد آباد کے مقام سے بند کر دی

۔نیشنل عوامی پارٹی اور این ایس ایف کا گرفتایوں ، تشددکے باوجود مظفرآباد میں قانون ساز اسمبلی آزاد کشمیر کی جانب مارچ ، مرکزی ایوان صحافت کے سامنے پولیس کے بھاری نفری نے این ایس ایف کے مرکزی صدر سردار صمد شکیل ،نیشنل عوامی پارٹی کے مرکزی چیف آرگنائز رصغیر چوہدری ،مرکزی رہنما اصغر نثار میر ،وقار کاظمی ایڈووکیٹ ،محمود میر سمیت متعدد کارکن گرفتار ، دارلحکومت مظفرآباد میں 4جولائی کی رات سے ہی گھروں پر چھاپے ،تشدد،لاٹھی چارج اور گرفتاریاں جاری تھیں ۔بدھ کے صبح ہی دارلحکومت کے تمام چوکوں چوراہوں پر پولیس کی بھاری نفری آنسو گیس ، لاٹھیوں سے لیس تعینات تھی اور این ایس ایف ، این اے پی کے کارکنان کا سلسلہ جاری تھا جبکہ اسئنٹ کمیشنر اور ڈایس پی کی قیادت میں پولیس کی بھاری نفری کا شہر بھر میں گشت نے خوف وہراس پھیلا رکھا تھا

۔گرفتاریوں سے قبل این ایس ایف کے مرکزی صدر سردار صمد شکیل ،نیشنل عوامی پارٹی کے مرکزی چیف آرگنائز رصغیر چوہدری ،نے سینٹرل پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تشدد ، گرفتاریاں ہمارے حوصلے بلند کرتی ہیں ،عوام کے بنیادی مسائل کے حل کیلئے قانون سازا سمبلی کی جانب لانگ مارچ اور پرامن دھرنے سے قبل 4جولائی کو آزاد کشمیر کے تمام و اٰضلاع سے مظفرآباد کی جانب نکلنے والے قافلوں پر لاٹھی چارج اور رہنمائوں کی گرفتاریاں کی گئیں ۔ہمیں بھی گرفتار کر لیا گیا تو بھمبر سے نیلم تک میں موجود نیشنل عوامی پارٹی اور این ایس ایف کے کارکن اس تحریک کو اپنے اپنے ضلع ،تحصیل،اور علاقے میں جاری رکھتے ہوئے احتجاج کریں گے۔ سومورا کی شب راولاکوٹ پولیس نے شرکا لانگ مارچ پر دھاوا بولتے ہوئے جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی کے مرکزی صدر سردار لیاقت حیات کو درجنوں ساتھیوں سمیت کپٹین حسین شہید پوسٹ گریجویٹ کالج گرائونڈ راولاکوٹ سے گرفتار کر لیا ہے

۔ گرفتار ھونے والوں میں ضلعی صدر زولفقار عارف ، مرکزی رہنما سابق امیدوار اسمبلی ناصر جاوید ۔شاہد شارف بھی شامل ہیںجبکہ مظفر آباد میں جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن کے مرکزی سیکرٹری جنرل مجتبی بانڈے،اور جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی کے ضلعی چیئر مین کامریڈ صغیرخان کو گرفتار کر لیا گیا ہیاین ایس ایف کے مرکزی ترجمان کے مطابق راولاکوٹ پولیس نے گرین ویلی ہوٹل راولاکوٹ میں نیپ/این ایس ایف کے جاری اجلاس پر پولیس کا کریک ڈان کرتے ہوئے مذید درجنوں کارکنان گرفتار کر لیے ہیں.جموں کشمیر نیشنل۔سٹوڈنٹس فیڈریشن کی مرکزی سینئر نائب صدر کامریڈ ادیبہ جمیل جموں کشمیر نیشنل عوامی پارٹی کے ممبر نیشنل کونسل کامریڈ عادل خان کو بھی درجنوں ساتھیوں سمیت گرفتار کر لیا گیا ہے۔نیپ کے مرکزی صدر کے ساتھ گرفتار ہونے والوں میں میرپور ، کوٹلی ، ہجیرہ، کھائی گلہ سے آنے والے نیپِ ،این ایس ایف کے بعض کارکن بھی شامل ہیں ۔گرفتاریوں کیخلاف نیپ این ایس ایف کے کارکنوں نے راولاکوٹ میں احتجاجی مظاہرہ کیا ہیجموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن کے مرکزی صدر کی قیادت میں راولاکوٹ اور مظفرآباد میں کی جانے والی گرفتاریوں کے خلاف کھائی گلہ میں منگل کے روز احتجاجی ریلی نکالی گئی۔

یاد رہے کہ آزادکشمیر کے مختلف پن بجلی منصوبوں سے پچیس سو میگاواٹ بجلی نیشنل گریڈ میں بھیجی جاتی ہے، ان منصوبوں میں واپڈا کے منصوبوں سمیت آزادکشمیر حکومت کی طرف سے چلائے جانے والے پن بجلی کے چھوٹے منصوبے بھی ہیں جبکہ آزادکشمیر کی کل ضرورت 350 میگا واٹ ہے۔ واپڈا نے آزادکشمیر میں بجلی سپلائی کرنے کیلئے بجلی کی ترسیلاتی کمپنیوں کی ذمہ داری لگا رکھی ہے جس کے مطابق آئیسکو آزادکشمیر کے چھ اضلاع پونچھ، باغ، سدھنوتی، حویلی، میرپور اور کوٹلی کو بجلی سپلائی کرتا ہے جبکہ پیسکو کمپنی مظفرآباد ڈویثرن کو اور گیپکو کمپنی بھمبر کو بجلی سپلائی کرتی ہے۔محکمہ برقیات کے سیکرٹری چوہدری طیب کے مطابق اس وقت مظفرآباد ڈویثرن اور بھمبر میں دیگر اضلاع کے مقابلے میں کم لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے لیکن ان علاقوں میں بھی بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ بڑھا ہے جس وجہ سے لوگوں کو مشکلات ہیں جبکہ آئیسکو جن اضلاع میں بجلی سپلائی کرتی ہے ان میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 12گھنٹے کے قریب ہے، سیکرٹری برقیات چوہدری طیب نے تصدیق کی ہے کہ محکمہ برقیات اور چیف سیکرٹری آفس آئیسکو اور وزارت توانائی کے حکام کے ساتھ ان مسائل کو حل کرنے کیلئے مسلسل کوششیں کر رہے ہیں ۔

چوہدری طیب کے مطابق محکمہ برقیات کو جو بجلی آئیسکو سے مل رہی ہے ہماری ٹیمیں اس کو تقسیم کر رہی ہیں۔ بڑے شہروں کے ہسپتالوں ، تعلیمی درسگاہوں اور فیکٹریوں وغیرہ میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کم کرنے کی کوشش کی جارہی ہے جبکہ دیہی علاقوں میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ مجبوری میں بڑھ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلے کا طویل المدتی حل نکالنے کیلئے حکومت سنجیدہ ہے تاہم اس وقت ملک میں بجلی کا شاٹ فال سات ہزار سے نو ہزار تک پہنچ چکا ہے جسکی وجہ سے پورے ملک میں لوڈ شیڈنگ بڑھی ہے تاہم آزادکشمیر چونکہ بجلی پیدا کرنے والا خطہ ہے اس لیے ہماری کوشش ہے کہ متعلقہ اداروں سے اس خصوصی حیثیت کے مطابق جائز سہولت لی جائے۔ کمشنر پونچھ سردار انصر یعقوب نے میڈیا کو بتایا کہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے عوام کا غم و غصہ بڑھ رہا ہے اسی لیے عوام سڑکیں بند کر کے احتجاج کر رہے ہیں، سڑکوں کی بندش سے مسافروں ، مریضوں اور سیاحوں کو شدید سفری مشکلات پیش آرہی ہیں جس کا ہمیں ادراک ہے ، فورس کا استعمال کرتے ہوئے سڑکیں کھلوانے کی کوشش اس لیے نہیں کی گئی کیونکہ انتظامیہ نے دیگر سٹیک ہولڈرز کے ساتھ ملکر احتجاج کرنے والوں کے ساتھ مذاکرات کئے اور اگر پھر بھی کسی وجہ سے سڑکیں نہ کھولی گئیں تو پھر انتظامیہ کو مجبوری میں بذریعہ پولیس فورس سڑکیں کھلوانا پڑیں گی۔کمشنر میرپور ڈویثرن چوہدری رقیب نے کے مطابق کوٹلی اور میرپور میں بھی لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ طویل ہے جس کی وجہ سے جگہ جگہ احتجاج کیا جارہا ہے۔ اس حوالے سے محکمہ برقیات کے ساتھ ملکر اس مسئلے کے حل کی کوششیں جاری ہیں۔