آزادکشمیر میں آٹا یکمشت 1200 روپے فی من مہنگا


اسلام آباد( نیل فیری رپورٹ)غریب کیلئے دو وقت کی روٹی بھی مشکل کر دی گئیآزادکشمیر کے محکمہ خوراک نے ریاست بھر میں سرکاری آٹے کی قیمت میں 30روپےفی کلو اور فی من 1200 روپے اضافہ کردیا ۔
20 کلوگرام فائن آٹا 1835 روپے
40 کلو گرام فائن آٹا 3670
80 کلو گرام فائن آٹا 7340
20 کلوگرام ہول میل آٹا 1777 روپے40کلوگرام ہول میل آٹا 3554روپے کا ہوکر دیا گیا
حکومت نے آٹے کے بحران کو کنٹرول کرنے کے بجائے آٹے کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا محکمہ خوراک آزادکشمیر کے سیکرٹریٹ نے صدر آزادکشمیر کی منظوری کے بعد اس ضمن میں نوٹیفیکشن جاری کر دیا ہے
اس طرح سرکاری آٹا 92 روپے فی کلو جبکہ سرکاری ہول میل آٹا 89 نواسی روپے فی کلو گرام ہو گیا ہے ۔ایک کلو آٹے قیمت میں یکمشت 30 روپے فی کلو اضافہ ہوا ہے
شہریوں نے سرکاری آ ٹے کے معیار پر شدید تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ سرکاری ہول میل آٹا ناقص کوالٹی کا ہےجو کھانے کے قابل نہیں ۔غریب کی تمام تر توجہ کا محور ’’روٹی‘‘ ہوتی ہے۔ سخت محنت کے بعد اُنہیں دو لقمے روٹی نصیب ہو ہی جاتی تھی۔ لیکن اب تو معصوم بچے ہی نہیں بوڑھے، نوجوان اور عورتیں بھی اپنے نصیبوں کو رو رہے ہیں
۔ نظر ایسا آرہا ہے کہ عام آدمی زندگی کی سانسیں رواں رکھنے کے لئے دو وقت کی روٹی کے لئے مارا مارا پھرتا رہے گا جن میں غریب خواتین سرفہرست ہوں گی۔